Fawad Ali Khan Utmanzai

From a Nagar of Hashtnagar

پہلے زندگی، ایمبولینس کو راستہ دیں

By on October 13, 2017

یہ ہم سب کا ایمان ہے اور قرآن مجید میں اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے کہ ہر جان کو موت کا مزہ چکھنا ہے۔ اس حقیقت سے کوئی بھی انکاری نہیں کہ موت کا جو وقت مقرر ہے اُس وقت کو اللہ کے سوا کوئی بھی تبدیل نہیں کرسکتا۔ ہرجاندار نے ایک روز ضرور اس دُنیا سے جانا ہے لیکن ہمیں سوچنا چاہییے کہ کسی کی موت کی وجہ ہم نہ بنے۔ دوران سفر جب بھی کبھی آپکے پیچھے ایمبولینس ہو اور ڈرائیور ہوٹر بجا کر آپ سے راستہ مانگے تو برائے مہربانی اُسکو راستہ ضرور دیں کیونکہ اُس میں آپکا اپنا بھی کوئی ہوسکتا ہے۔

ویسے تو ہمارے دیس میں وی آئی پی کلچر کے ہوتے ہوئے یہ ناممکن ہیں کہ ہر جگہ ایمبولینس کو راستہ دیا جائے کیونکہ اُس وقت جب وی آئی پیز سڑک پر آتے ہیں تو ہمارے راستے بند کیے جاتے ہیں اور مصروف شاہراہ پر چند ہی منٹوں میں گاڑیوں کی قطاریں لگ جاتے ہیں۔ اب اگر اُس میں ایمبولینسز بھی ٹریفک میں پھنس گئیں اور مریض قریب المرگ ہو تو تب بھی کوئی اُنکو راستہ نہیں دیسکےگا۔ ہمیں وی آئی پی کلچر کو حتم کرنا پڑیگا۔ اگر یہ ناممکن ہے تو کم ازکم ہسپتالوں تک جانے والے تمام راستوں میں ایمبولینس کے لیئے الگ راستے کا تعین کرکے عوام کے لیئے کچھ آسانی پیدا کرنا چاہیئے۔

آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ ایمبولینس کے ہوٹر کا بھی کسی پر کوئی اثر نہیں ہوتا اور اپنے ہی خیالات میں مگن رہ کر یہ بھول جاتے ہیں کہ پیچھے ایمبولینس میں جو انسان تڑپ رہا ہے اسکی جان بھی جا سکتی ہے۔ جیسا کہ ہم سب کو پتہ ہے کہ پاکستان کیا پوری دُنیا میں کسی کو بھی اپنا کوئی مطالبہ منوانا ہو تو وہ احتجاج کا ہی راستہ اپناتا ہے اور اُسکے اظہار کے لیئے سڑک بلاک کرنا اپنا جائز حق سمجھتے ہیں لیکن اپنے جوش میں یہ بھول جاتے ہیں کہ ہمارے وجہ سے جو راستہ بلاک ہے اور گاڑیوں کی آمدورفت معطل ہے اس وجہ سے ایمبولینسز بھی ٹریفک میں پھنس گئیں۔ پھر نتیجہ کیا نکلتا ہے ایک انسان کی جان وہی سڑک پر تڑپ تڑپ کر نکلتی ہے لیکن کیا ہوا وہ تو اپنے مطالبات پہ بضد ہیں اسکو کیا پرواہ کہ ایمبولینس میں کون ہیں۔ اگر احتجاج اور پر امن جلوسوں کے لیے مصروف شاہراہوں کو چھوڑ کر کسی اور جگہ کا انتخاب کر لیا جائے تو بہتر ہے یا ان شاہراہوں پر مجبوراً کرنا بھی پڑے تو کم از کم ایک سڑک کو تو ٹریفک کے لیے کھلا چھوڑ دیا جائے تا کہ ایمبولینس جیسی سروس تو متاثر نہ ہو۔

اس طرح بے شمار واقعات ہیں کہ کسی احتجاج کی وجہ سے ایمبولینس کو راستہ نہ ملا ہو اور مریض دم توڑ چکا ہو لیکن کچھ عرصہ پہلے لاہور میں جیل روڈ پر پیرا میڈیکل اسٹاف کے مظاہرے کے دوران 4 گھنٹے تک بدترین ٹریفک جام رہا تھا۔ پیرا میڈیکل اسٹاف میں کون لوگ ہوتے ہیں وہی جو کہتے ہیں کہ ہم انسانی خدمت کے جذبے کے تحت اس پیشے میں آئے ہیں مگر انکے احتجاج کے دوران کئی ایمبولینسز بھی ٹریفک میں پھنس گئیں،ایک ایمبولینس میں موجود دل کی مریضہ وہیں تڑپ تڑپ کر دم توڑ گئی،بے بسی کے عالم میں لواحقین کی چیخ و پکار اور ایمبولینس کے ہوٹر کا بھی کسی پر کوئی اثر نہ ہوا۔ اگر کسی بھی مطالبے کے لیئے آپ احتجاج کر رہے تو کم از کم اُس وقت ضرورایمبولینس کے ہوٹر سُننے پر ایک مہذب شہری ہونے کا ثبوت دیں اور ایمبولینس کو راستہ دیں۔

ّعام حالات میں ایمبولینس کو راستہ دینا تو ہم سب کا فرض ہے کیونکہ کسی بھی انسانی جان بچانے سے ضروری اور کوئی کام نہیں ہوتا۔ میں نے لوگوں سے یہ بھی سُنا ہے کہ کچھ ایمبولینس کے ڈرائیورز ہوٹر کا بھی غلط استعمال کرتے ہیں اور نارمل حالات میں بھی وہ ہوٹر استعمال کرکے لوگوں سے آگے نکلنے میں کامیاب ہوتے ہیں۔ میرے خیال میں ہمیں اس چیز کو بلکل ذہن میں نہیں لانی چاہیے کہ ایمبولینس میں مریض ہے یا نہیں بلکہ ہمیں اپنے آپ کو عادی بنانا ہیں کہ ہوٹر سنتے ہی جتنی جلدی ہو سکے ایمبولینس کو راستہ دینا چاہییے۔

پاکستان میں سڑکوں پر بے ہنگم ٹریفک کی وجہ سے ایمبولینس کو راستہ نہ ملنے کی وجہ سے ہونے والے جانی نقصان سے بچاؤ کے لیے اسلام آباد میں انٹرنیشنل کمیٹی آف دی ریڈ کراس کی جانب سے ’پہلے زندگی، ایمبولینس کو راستہ دیں‘ کی مہم کا آغاز کیا گیا ہے۔ 'انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس' کی قیادت میں شروع کی جانے والی اس مہم میں پاکستان میں ریسکیو کا ادارہ ریسکیو 1122، پولیس، اسپتال اور مختلف غیر سرکاری تنظیمیں شامل ہیں۔ اس مہم کا مقصد ہی یہ ہے کہ لوگوں میں شعور اجاگر کیا جائے کہ انسانی زندگی بہت اہمیت کی حامل ہے اور صرف چند لمحوں کے لیے راستہ دینے سے کسی کی زندگی بچائی جاسکتی ہے۔ آئیں ہم سب مل کر یہ عہد کریں کہ ایمبولینس کو راستہ دیکر کسی بھی انسان کے قیمتی جان کو بچانے میں اپنا کردار ادا کرینگے۔

انٹرنیشنل کمیٹی آف دی ریڈ کراس کے اس مہم میں شامل ہونے کے لیئے اپنے سمارٹ فون پر اُنکے اپلیکیشنز ڈاون لوڈ کریں۔

Facebook Comments
Take Surveys and Earn Money Click Here!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *